کراچی: دو دن میں ڈینگی کیسز دوگنے ہو گئے 

ڈینگی بخار کے کیسز میں اضافہ

محکمہ صحت سندھ کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق ڈینگی بخار کے کیسز میں اضافہ ہوا ہے کیونکہ ان کی تعداد صرف دو دنوں میں دگنی ہوگئی ہے۔ بدھ کے روز 201 کیسز سے جمعہ کو 403 کیسز ہو گئے ہیں۔

 ان میں سے زیادہ تر کیسز ڈسٹرکٹ ایسٹ میں واقع ہسپتالوں میں رپورٹ ہوئے (116) اس کے بعد کورنگی (107)، سینٹرل (72)، جنوبی (61)، ملیر (26)، ویسٹ (12) اور کیماڑی (9) صحت مراکز میں۔

 رواں ماہ کراچی میں ڈینگی بخار کے کل 2,145 کیسز رپورٹ ہوئے۔ مشرقی (842) اس کے بعد (431)، جنوبی (377)، کورنگی (286)، ملیر (93)، کیماڑی (64) اور مغربی (52) میں صحت کی سہولیات ہیں۔ 

باقی سندھ میں حیدرآباد ڈویژن میں 16، لاڑکانہ ڈویژن میں ایک، سکھر ڈویژن میں دو اور شہید بینظیر آباد ڈویژن میں چار کیسز رپورٹ ہوئے۔ 

ڈینگی کے زیادہ تر مریضوں کو ہلکی بیماری تھی

محکمہ صحت کے ایک اہلکار نے وضاحت کی کہ ڈینگی کے زیادہ تر مریضوں کو ہلکی بیماری تھی اور انہوں نے یا تو پرائیویٹ کلینکس یا ہسپتالوں کے آؤٹ پیشنٹ ڈیپارٹمنٹ میں رپورٹ کی۔ 

سرکاری اعداد و شمار زمینی حقیقت کی عکاسی نہیں کرتے

یہ بھی پڑھیں | سندھ حکومت کا سیلاب زدہ علاقوں میں پیرامیڈیکل سٹاف بھرتی کرنے کا فیصلہ

یہ بھی پڑھیں | سندھ کا ڈینگی وائرس سے مقابلے کے لئے پنجاب کے ماہرین سے مدد لینے کا فیصلہ

لیکن، ہسپتال اپنے او پی ڈی مریضوں کا مناسب ریکارڈ نہیں رکھتے جبکہ فیملی فزیشنز کے ساتھ ساتھ شہر کی لیبارٹریوں کو فی الحال اپنائے گئے پروٹوکول کے تحت اپنا ڈیٹا شیئر کرنے کی ضرورت نہیں ہے۔ لہذا، سرکاری اعداد و شمار زمینی حقیقت کی عکاسی نہیں کرتے ہیں کیونکہ صرف شدید ڈینگی کیسز میں داخلے کی ضرورت ہوتی ہے۔

ڈینگی بخار کے کیسز

 ماہرین کا خیال ہے کہ ڈینگی بخار کے کیسز کی موجودہ تعداد اس سے پانچ گنا زیادہ ہو سکتی ہے جو محکمہ صحت کی طرف سے بتائی جا رہی ہے۔ 

 دریں اثنا، محکمہ صحت نے جمعہ کو ملیریا کے 3000 سے زیادہ کیسز کی اطلاع دی۔ 

 ان میں سے زیادہ تر حیدرآباد، ٹنڈو الہ یار، مٹیاری، جامشورو، ٹنڈو محمد خان، دادو، ٹھٹھہ، سجاول، بدین، لاڑکانہ، شکارپور، جیکب آباد، کشمور، قمبر شہدادکوٹ، عمرکوٹ، تھرپارکر اور میرپورخاص میں ریکارڈ کیے گئے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔