پیٹرول اور ڈیزل کی نئی قیمتوں کا اعلان کر دیا گیا

  پاکستان نے جمعرات کو پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا اعلان کیا جس کا اطلاق 15 جولائی 2022 سے بین الاقوامی منڈیوں میں تیل کی قیمتوں میں بڑے پیمانے پر کمی کے بعد ہوگا۔

وزیر اعظم شہباز شریف نے عوامی خطاب میں پٹرول کی قیمتوں میں کمی کا اعلان کیا

 وزیر اعظم شہباز شریف نے عوامی خطاب میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کا اعلان کیا ہے۔ پیٹرولیم مصنوعات کی نئی قیمتیں درج ذیل ہیں۔ 

 پیٹرول کی نئی قیمت 18 روپے 50 پیسے فی لیٹر کم ہو کر 248 روپے 74 پیسے سے کم ہو کر 230 روپے 24 پیسے ہو گئی ہے۔ 

 ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت 40.54 روپے فی لیٹر کم ہو کر 276.54 روپے سے کم ہو کر 235.95 روپے ہو گئی ہے۔

مٹی کے تیل کی قیمت 33 روپے 81 پیسے فی لیٹر کم ہو کر 230 روپے 26 پیسے سے کم ہو کر 196 روپے 45 پیسے ہو گئی۔

یہ بھی پڑھیں | پیٹرولیم ڈیلرز نے 18 جولائی کو احتجاج کی کال دے دی

یہ بھی پڑھیں | بلومبرگ کا پاکستان کے آئی ایم ایف کے ساتھ کامیاب مذاکرات ہونے کا دعوی

 اسی طرح لائٹ اسپیڈ ڈیزل کی قیمت 34 روپے 71 پیسے فی لیٹر کم ہو کر 226 روپے 15 پیسے سے کم ہو کر 191 روپے 44 پیسے ہو گئی۔ ۔۔۔ وزیر اعظم نے 12 جولائی 2022 کو حکام کو ہدایت کی کہ بین الاقوامی منڈیوں میں تیل کی گرتی ہوئی قیمتوں کا پورا فائدہ عوام تک پہنچایا جائے۔ 

 وزیراعظم نے پیٹرولیم اور خزانہ کی وزارتوں کو ہدایت کی کہ وہ 16 جولائی 2022 سے شروع ہونے والے اگلے پندرہ دن کے لیے تیل کی قیمتوں میں کمی کی سمری تیار کریں۔ 

 ایندھن کی قیمتوں سے متعلق اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ عوام نے مشکل وقت گزارا، اب انہیں پورا ریلیف ملنے کا حق ہے۔ 

 انہوں نے کہا کہ ہم عوام کو ریلیف کی فراہمی کے لیے ہر قدم اٹھائیں گے جو پچھلی حکومت کی وجہ سے مہنگائی کی وجہ سے شدید مشکلات کا شکار ہیں۔ 

 بعد ازاں، وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل نے کہا کہ وزارت پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے لیے بدھ 13 جولائی 2022 کو ایک سمری بھیجے گی۔ 

 مفتاح اسماعیل نے مزید کہا کہ پیٹرولیم ڈویژن سے سمری موصول ہونے کے بعد ہم اسے وزیراعظم ہاؤس بھیجنے کی کوشش کریں گے۔ 

 انہوں نے کہا کہ عوام کے مفاد میں وزیراعظم کی ہدایت پر پٹرولیم کی قیمتوں میں کمی کی جائے گی۔ 

 پی ٹی آئی کی پچھلی حکومت نے عوام کو ریلیف دینے کے لیے پیٹرولیم لیوی اور سیلز ٹیکس دونوں کو صفر پر رکھا تھا۔ پی ٹی آئی حکومت نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں پر بھاری سبسڈی بھی فراہم کی تاکہ نرخوں میں کمی اور عوام کو ریلیف مل سکے۔ 

 تاہم سابق وزیراعظم عمران خان کو 10 اپریل 2022 کو تحریک عدم اعتماد کے ذریعے ہٹا دیا گیا تھا۔ 

اس کے بعد مسلم لیگ (ن) کی قیادت میں نئی ​​مخلوط حکومت نے تین مختلف مواقع پر پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ہوشربا اضافہ کیا۔ 

 وزیر اعظم شہباز شریف کی نئی حکومت نے 26 مئی 2022، 02 جون 2022 اور 15 جون 2022 کو پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کیا، ان قیمتوں میں مجموعی طور پر حکومت نے پیٹرول کی قیمت میں 84 روپے فی لیٹر اضافہ کیا۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں