پنجاب کا خصوصی بورڈ نواز شریف کی رپورٹ دیکھے، اے جی پی

اٹارنی جنرل آف پاکستان (اے جی پی) کے دفتر نے جمعرات کو پنجاب حکومت سے سابق وزیر اعظم نواز شریف کی صحت سے متعلق تازہ طبی رپورٹس کو ٹیسٹ کے لیے خصوصی میڈیکل بورڈ کے سامنے رکھنے کی درخواست کی ہے۔

تفصیلات کے مطابق 28 جنوری کو ڈاکٹر فیاض شال کی جانب سے میری لینڈ، یو ایس سے جاری کردہ دستاویز کو نو رکنی میڈیکل بورڈ کے سامنے رکھنے کی درخواست کی گئی ہے جس میں اس کا جائزہ لینے اور نواز شریف کی معلوم اور رپورٹ شدہ حقائق اور عوامی سرگرمیوں کا جائزہ لینے کی درخواست کی گئی ہے۔ 

یہخط سیکرٹری داخلہ پنجاب ظفر نصراللہ خان کو بھیجا گیا ہے۔ 

یہ خط قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف کی جانب سے اے جی پی کے دفتر کی جانب سے انہیں لکھے گئے ایک پہلے خط کو جس میں ان کے بڑے بھائی کی تازہ طبی رپورٹس طلب کی گئی تھیں، کو لاہور ہائیکورٹ کی جانب سے “سیاسی طور پر محرک” اور احکامات کی خلاف ورزی قرار دینے کے ایک دن بعد جاری کیا گیا ہے۔  

یہ بھی پڑھیں | حسین نواز نے نواز شریف کی فیکٹری وزٹ ویڈیو چار پانچ ماہ پرانی قرار دے دی

شہباز شریف  نے اے جی پی کے دفتر میں اپنے جواب میں لکھا تھا کہ خط کا مقصد سیاسی محرکات اور قانون سے مبرا خیالات، میڈیکل بورڈ کی تشکیل، اس کی طرف سے کارروائی اور خط کے ذریعے اس کی بنیاد پر اٹھایا جانے والا مطالبہ مینڈیٹ کے خلاف ہے۔

  پنجاب حکومت کو لکھے گئے اپنے خط میں اے جی پی کے دفتر نے وضاحت کی ہے کہ نواز شریف کی صحت کی رپورٹس خصوصی میڈیکل بورڈ کے سامنے رکھنے کی درخواست وفاقی کابینہ کے 11 جنوری کے فیصلے کے پیش نظر کی گئی تھی جس میں اے جی پی کے دفتر کو کارروائی شروع کرنے کی ہدایت کی گئی تھی۔ 

 قبل ازیں 12 جنوری کو اے جی پی کے دفتر نے پنجاب حکومت سے درخواست کی تھی کہ وہ سابق وزیراعظم کی موجودہ صحت کی حالت کا تعین کرنے کے لیے ایک میڈیکل بورڈ تشکیل دینے پر غور کرے۔ 

سولہ نومبر 2019 کے لاہور ہائی کورٹ کے حکم کی روشنی میں تصدیق کا عمل شروع کرنے کے لیے، حکومت پنجاب سے درخواست کی گئی ہے کہ وہ درخواست گزار اور میاں محمد نواز شریف کی جانب سے میڈیکل رپورٹس کے طور پر جمع کرائے گئے دستاویزات کی ٹیسٹنگ کے لیے ایک میڈیکل بورڈ/کمیٹی تشکیل دے۔ تاکہ نواز شریف کی جسمانی حالت اور ان کی پاکستان واپسی کی اہلیت کے بارے میں ماہرانہ طبی رائے دستیاب کرائی جائے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں