پاک افغان میچ میں بدنظمی پر متحدہ عرب امارات کے بھاری جرمانے 

پاکستان بمقابلہ افغانستان میچ

متحدہ عرب امارات (یو اے ای) کی پولیس نے پاکستان بمقابلہ افغانستان میچ کے بعد تشدد میں ملوث شائقین کو بھاری جرمانہ کیا ہے۔ 

پاکستان نے اس ہفتے کے شروع میں شارجہ میں ہونے والے ایشیا کپ میں افغانستان کے خلاف ایک وکٹ سے سنسنی خیز مقابلہ جیتا تھا اور یہ اسٹیڈیم میں موجود کچھ افغان شائقین کے لیے ٹھیک نہیں تھا۔ 

سوشل میڈیا پر بدھ کے میچ کے بعد شائقین کے تصادم اور اسٹیڈیم کی املاک میں توڑ پھوڑ کی ویڈیوز وائرل ہوئی تھیں۔

شارجہ پولیس

شارجہ پولیس نے اس افسوسناک واقعے میں ملوث تماشائیوں پر 3000 درہم (تقریباً 190,000 روپے) کا جرمانہ عائد کیا ہے۔ پولیس نے یہ وارننگ بھی دی ہے کہ مستقبل میں ایسا واقعہ رونما ہونے کی صورت میں ملوث افراد کو ڈی پورٹ کر دیا جائے گا۔ 

یہ بھی پڑھیں | منیب بٹ نے پاکستان کی افغانستان سے جیت پر جشن منایا

یہ بھی پڑھیں | فخر زمان پر تنقید کے بعد شان شاہد کو سوشل میڈیا صارفین کا جواب

 نسیم شاہ نے میچ کے آخری اوور میں فضل الحق فاروقی کی گیند پر دو چھکے لگانے کے بعد پاکستان نے افغانستان کو شکست دے کر ٹیم کو اتوار کو ٹی ٹوئنٹی ٹورنامنٹ کے فائنل میں پہنچا دیا۔ 

یہ معاملہ اس وقت شروع ہوا جب افغانستان کے تیز گیند باز فرید احمد نے آصف علی کو آؤٹ کیا اور اس کے ساتھ گرما گرم بحث کی جبکہ آصف علی نے بھی بلا دکھایا اور بالآخر امپائر کے ساتھ مل کر معاملہ ختم کروایا۔

افغانستان کے شائقین

اس کے بعد یہ غصہ فینز میں منتقل ہوا جس کی ویڈیوز گردش کر رہی ہیں کہ افغانستان کے شائقین سیٹیں اکھاڑ رہے ہیں اور پاکستانی شرٹس والے شائقین پر پھینک رہے ہیں۔

 چیئرمین پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) رمیز راجہ نے بھی مداحوں کے بے ہنگم رویے کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ کرکٹ کے ساتھ غنڈہ گردی ناقابل قبول ہے۔

 ایسا پہلی بار نہیں ہوا۔ جذبات کو قابو میں رکھنا چاہیے، ہم اپنے مداحوں کے مالک ہیں اور ہم آئی سی سی سے احتجاج درج کراتے ہیں۔ کرکٹ کونسل)۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔