پاکستان کی بھارت کے آر ایس ایس چیف کے ریمارکس کی مذمت

 پاکستان  پاکستان

پاکستان نے ہفتے کے روز ہندوستان

کی راشٹریہ سویم سیوک سنگھ (آر ایس ایس) کے سربراہ موہن بھاگوت کے انتہائی اشتعال انگیز اور غیر ذمہ دارانہ ریمارکس کو مسترد کیا اور اس کی سختی سے مذمت کی ہے جس میں تقسیم کو “کالعدم” کرنے کا مطالبہ کیا گیا۔

 آج جاری کردہ ایک بیان میں، دفتر خارجہ نے کہا کہ یہ پہلا موقع نہیں ہے جب آر ایس ایس کے سربراہ نے عوامی طور پر اس طرح کی فریب آمیز سوچ اور تاریخی شدت پسندی کو جنم دیا ہے۔ 

پاکستان نے بارہا علاقائی امن و استحکام کو لاحق خطرے کو اجاگر کیا ہے انتہا پسند ہندوتوا نظریہ (ہندو راشٹرا) اور توسیع پسند خارجہ پالیسی (اکھنڈ بھارت) کے زہریلے مرکب سے جو ہندوستان میں حکمران جماعت بی جے پی آر ایس ایس  کے ذریعے چلائی جا رہی ہے۔

 دفتر خارجہ نے کہا کہ اس خطرناک ذہنیت کا مقصد ہندوستان میں اقلیتوں کو اندرونی تناظر میں مکمل طور پر پسماندہ اور بے دخل کرنا ہے جبکہ بیرونی محاذ پر یہ جنوبی ایشیا میں ہندوستان کے تمام پڑوسیوں کے لیے ایک وجودی خطرہ ہے۔ 

یہ بھی پڑھیں | بابر اعظم نے شادی اور سیلری سمیت دیگر اہم سوالات کے جوابات دے دئیے   

دنیا بھارت میں اقلیتوں بالخصوص مسلمانوں کے حقوق کو منظم طریقے سے غصب کرنے اور مقبوضہ جموں کشمیر میں کشمیریوں پر جاری جبر کی گواہ ہے۔ فروری 2019 سمیت بھارت کی لاپرواہی کی مہم جوئی، جس نے علاقائی امن و استحکام کو شدید نقصان پہنچایا، وہ بھی دنیا کے سامنے ہے۔ 

دفتر خارجہ نے کہا کہ پاکستان نے بھارت کے تسلط پسندانہ اقدامات کی مسلسل مخالفت کی ہے اور کسی بھی جارحانہ عزائم کو ناکام بنانے کے پختہ عزم کا مظاہرہ کیا ہے۔ 

 امن کے لیے پرعزم رہتے ہوئے پاکستانی عوام اور مسلح افواج ملک کی خودمختاری اور علاقائی سالمیت کا دفاع کرنے کی پوری صلاحیت رکھتی ہیں۔ 

 اس میں مزید کہا گیا کہ بی جے پی اور اس کے نظریاتی سر چشمہ آر ایس ایس سے تعلق رکھنے والوں کو اچھی طرح سے مشورہ دیا جائے گا کہ وہ ایسے اشتعال انگیز اور غیر ذمہ دارانہ بیانات دینے سے گریز کریں، قائم شدہ حقائق کو قبول کریں اور پرامن بقائے باہمی کے تقاضوں پر عمل کرنا سیکھیں۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں