مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کا 11 اکتوبر سے کوئٹہ میں پہلی ریلی ریلی نکالنے کا اعلان

پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کی جانب سے منگل کے روز پریس کانفرنس کی گئی جس میں اعلان کیا گیا ہے کہ وہ ملک کو موجودہ “غیر آئینی نظام” سے پاک کرنے کے لئے کوئٹہ میں 11 اکتوبر کو اپنی پہلی عوامی ریلی نکالیں گے۔

یہ اعلان سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ 11 اکتوبر کو ، پی ڈی ایم اپنی پہلی عوامی ریلی نکالے گی اور پھر یہ تحریک پورے پاکستان میں پھیل جائے گی اور پاکستان کو اس غیر آئینی نظام سے نجات دلائے گی۔

 سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے یہ بھی بتایا کہ حزب اختلاف کی جماعتوں کے آج کے اجلاس میں پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کی اسٹیئرنگ کمیٹی کی منظوری دے دی گئی ہے۔

 انہوں نے کہا کہ آج جو تنظیمی ڈھانچہ تیار کیا گیا ہے اسے اب پارٹی رہنماؤں کو منظوری کے لئے بھیجا جائے گا۔ انہوں نے یہ بھی کہا کہ تنظیم سے متعلق دیگر تفصیلات جلد ہی لوگوں کے ساتھ شیئر کی جائیں گی۔ 

 راجہ پرویز اشرف نے اسٹیئرنگ کمیٹی سے متعلق میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ پہلے ماہ کی کنوینرشپ مسلم لیگ (ن) کے پاس ہے اور کنوینر احسن اقبال ہوں گے۔ انہوں نے میڈیا سے اپنے خطاب میں کہا کہ آج کے اجلاس میں جمہوریت کے لئے تنگ پڑتی جگہ کی مذمت کی گئی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ اس اجلاس میں ملک میں جاری افراط زر ، بڑھتی ہوئی بے روزگاری اور تاریخی بدعنوانی کے سیلاب کی بھی مذمت کی گئی ہے۔

 مسلم لیگ (ن) کے رہنما نے مزید کہا کہ عوام کے “مایوس کن” معاملات پر بھی اجلاس میں غور کیا گیا۔ شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ آپ دیکھیں گے کہ یہ تحریک ملک میں حقیقی سیاسی تبدیلی لائے گی۔

پیپلز پارٹی کے رہنما اشرف نے کہا کہ آج کے اجلاس میں خاص طور پر قومی اسمبلی میں اپوزیشن لیڈر شہباز شریف کی گرفتاری کی مذمت کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس گرفتاری کی وجہ سے جمہوری ادارے کمزور ہوجائیں گے اور پاکستانی عوام میں غم و غصہ بڑھے گا۔

 انہوں نے یہ بھی کہا کہ اگر حزب اختلاف کے رہنما کے خلاف ریفرنس دائر کیا گیا تو اسے گرفتار کرنے کی کوئی وجہ نہیں ہے۔ 

شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ حزب اختلاف کے دیگر رہنماؤں نے بھی محسوس کیا کہ حکومتی وزراء نے ٹی وی پر آکر گرفتاریوں کی “پیش گوئیاں” کر کے نیب کی آزادی پر سمجھوتہ کیا ہے۔ 

پیپلرز پارٹی رہنما اشرف نے بتایا کہ 11 اکتوبر کو ہونے والے پاور شو کے بعد اس سلسلے میں جلسے ہوں گے جو تمام صوبوں میں ہوں گے۔ انہوں نے مزید کہا کہ یہ ریلیاں اس لئے ہوں گی کیونکہ پی ڈی ایم کا خیال ہے کہ پاکستانی عوام بہت دباؤ میں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ حزب اختلاف خاموش نہیں رہ سکتا۔ ہم ایک جمہوری نظام کا حصہ ہیں اور ہم جمہوری انداز میں آگے بڑھنا چاہتے ہیں۔ 

 دریں اثنا ، جمعیت علمائے اسلام کے مولانا غفور حیدری نے اس عزم کا اظہار کیا کہ حزب اختلاف کی تحریک اس وقت تک جاری رہے گی جب تک کہ وہ سیلیکٹڈ حکومت کو ختم نہیں کر دیتے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔