پاکستان میں 2020 کے پہلے 6 ماہ میں ہر روز 8 بچے جنسی طور پر ہراساں کئے گئے، رپورٹ

12 ستمبر 2020: (جنرل رپورٹر) چائلڈ پروٹیکشن این جی او ساحل کے مطابق ، پاکستان میں 2020 کے پہلے چھ مہینوں میں اوسطا ہر روز آٹھ سے زیادہ بچوں کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا۔ جمعرات کو جاری ہونے والی اپنی چھ ماہ کی “کرور نمبر” رپورٹ میں ، ساحل نے بتایا کہ رواں سال جون تک 497 بچوں کو جنسی طور پر زیادتی کا نشانہ بنایا گیا ہے۔

 این جی او نے بتایا کہ زیادہ تر کیس پنجاب میں تھے – 57٪۔ باقی میں سے 32٪ سندھ میں اور 6٪ خیبر پختون خوا میں رپورٹ ہوئے۔ رپورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ اسلام آباد میں 35 ، بلوچستان میں 22 ، آزاد جموں و کشمیر میں 10 ، اور گلگت بلتستان میں ایک سے زیادہ کیس رپورٹ ہوئے۔ 

رپورٹ شدہ کل معاملات میں سے 62٪ دیہی علاقوں سے اور 38٪ شہری علاقوں سے رپورٹ ہوئے کم از کم 173 بچوں کے ساتھ اجتماعی زیادتی کی گئ جبکہ جنسی زیادتی کی کوشش کی 227 اطلاعات ہیں۔ مزید یہ کہ 38 بچوں کو جنسی طور پر زیادتی کے بعد ہلاک کیا گیا تھا۔

زرائع کے مطابق جنسی زیادتی کا نشانہ بننے والے کل بچوں میں سے 53٪ لڑکیاں اور 47٪ لڑکے تھے۔ این جی او نے اس بات پر بھی روشنی ڈالی کہ کم عمری میں شادی کے 51 واقعات رپورٹ ہوئے ہیں۔

 اس میں مزید کہا گیا ہے کہ جنوری تا جون 2020 کے 84 اخباروں کے اعدادوشمار سے یہ نتائج اخذ کیے گئے ہیں اور ان چاروں صوبوں کے علاوہ اسلام آباد کیپیٹل ٹیریٹری ، آزاد جموں و کشمیر ، اور گلگت بلتستان کے واقعات کا احاطہ کیا گیا ہے۔

شئر کریں

جاویریہ حارث

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *