پاکستان میں کورونا مثبت شرح مسلسل چھٹے دن دس فیصد سے تجاوز کر گئی

  نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) کے اعداد و شمار نے آج بروز منگل بتایا ہے کہ پاکستان کا کورونا وائرس مثبت تناسب لگاتار چھٹے دن 10 فیصد سے اوپر رہا ہے۔ 

 این سی او سی کے اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ ملک میں مثبت شرح 12.81 فیصد ریکارڈ کی گئی کیونکہ گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران پاکستان بھر میں 49,595 ٹیسٹ کیے جانے کے بعد 6,357 نئے کورونا وائرس کیسز ریکارڈ کیے گئے تھے۔ 

 سرکاری اعدادوشمار کے مطابق نئے کیسز کی نشاندہی کے ساتھ ہی مجموعی مثبتیت بڑھ کر 1.381 ملین ہو گئی ہے جب کہ مزید 17 مریض اس وائرس کا شکار ہو گئے ہیں، جس سے ہلاکتوں کی تعداد 29,122 ہو گئی ہے۔ 

 ‘مزید پابندیاں’ 

 طبی ماہرین نے نجی نیوز کو بتایا ہے کہ اومیکرون ویریئنٹ کی وجہ سے کیسز میں مسلسل اضافے کے رجحان نے انتہائی نگہداشت کے مریضوں کی تعداد میں اضافہ کیا ہے۔ 

 دریں اثنا، حکام نے کہا ہے کہ پاکستان فروری کے پہلے یا دوسرے ہفتے میں اپنے عروج کا تجربہ کر سکتا ہے۔ 

یہ بھی پڑھیں | حکومت میں نا رہا تو زیادہ خطرناک ہو جاؤں گا، وزیر اعظم عمران خان

حکام نے کہا ہے کہ اس صورتحال پر قابو پانے کے لیے اس ہفتے مزید پابندیاں متوقع ہیں۔ 

 جن شہروں میں کوویڈ انفیکشن کی شرح 10 فیصد سے زیادہ ہے وہ درج ذیل ہیں:

کراچی – 40.68%

 مظفرآباد – 29.41% 

پشاور – 23.89% 

حیدرآباد – 21.53% 

لاہور – 15.83% 

راولپنڈی – 12.50% 

 اضلاع کی مجموعی صورتحال

 چونکہ ملک میں کورونا وائرس کی پانچویں لہر تیزی سے پھیل رہی ہے، اومیکرون کی انتہائی منتقلی کی وجہ سے، پاکستان کے بڑے شہروں میں ٹیسٹ مثبت تناسب میں اضافہ دیکھنے میں آیا ہے۔

سال 2020 میں، ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن (ڈبلیو ایچ او) نے حکومتوں کو مشورہ دیا کہ سرگرمیاں دوبارہ کھولنے سے پہلے، مثبتیت کی شرح کم از کم 14 دنوں تک 5 فیصد یا اس سے کم ہونی چاہیے۔ 

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں