وزیر اعظم نے جنسی زیادتی کرنے والوں کو نا مرد بنانے کی حمایت کر دی

وزیر اعظم عمران خان نے موٹر وے گینگ ریپ کے معاملے پر ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے پیر کے روز عصمت دری کرنے والوں کو نامرد بنانے کا مطالبہ کیا تاکہ وہ آئندہ کسی ایسے جرم کا ارتکاب نا کر سکے۔ نا مرد بنانے کے علاوہ وزیر اعظم عمران خان نے مجرمان کو سرعام پھانسی کی سزا  سنانے کی بھی حمایت کی۔

 انہوں نے نجی نیوز چینل کے لئے سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ اس زیادتی کے کیسز کی بھی درجہ بندی کی جانی چاہئے ، پہلی ڈگری اور دوسری ڈگری۔ وزیر اعظم عمران نے مزید کہا کہ کیمیکل کاسٹریشن ہونا چاہئے۔ میں اس پر پڑھ رہا ہوں ، یہ بہت سارے ممالک میں ہوتا ہے۔ موٹر وے جنسی زیادتی کے واقعہ کے بارے میں بات کرتے ہوئے وزیر اعظم عمران نے کہا کہ اس نے پوری قوم کو ہلا کر رکھ دیا ہے کیونکہ ہر ایک کو لگتا ہے کہ یہ ان کی بیویوں اور بیٹیوں کے ساتھ ہوسکتا ہے۔

وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ جب وہ پہلے وزیر اعظم بنے تو اسلام آباد کے آئی جی کی جانب سے بریفنگ ملنے پر انہیں حیرت کا سامنا کرنا پڑا جس نے انہیں بتایا کہ خواتین اور بچوں کے خلاف جنسی جرائم بڑھ رہے ہیں۔

وزیر اعظم نے کہا کہ جنسی زیادتی اور جنسی استحصال کے معاملات سے نمٹنے کے لئے تین طریقے ہیں ، جن کا آغاز جنسی مجرموں اور بچوں سے متعلق جنسی زیادتیوں کے اندراج سے شروع ہوتا ہے۔ انہوں نے بیرونی ممالک کی مثال بیان کی جہاں بچوں سے جیل سے رہا ہونے کے بعد دوبارہ جنسی استحصال کا ثابت شدہ ریکارڈ موجود ہے۔ حکومتوں نے ان کا صحیح اندراج کیا اور ان کا پتہ لگایا۔ وزیر اعظم عمران نے کہا کہ دوسرا مرحلہ جس کے ذریعے حکومت عصمت دری اور بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے والوں سے نمٹ سکتی ہے وہ انہیں مثالی سزاؤں کے حوالے کرنا ہے۔

 انہوں نے کہا کہ انہیں چوکوں پر پھانسی دی جانی چاہئے۔ انہوں نے مزید کہا کہ کیونکہ وہ بچوں کی زندگی اور ان کے والدین کی زندگی کو برباد کرتے ہیں۔ آپ کو یہ تک نہیں معلوم کہ ان کی رپورٹ کم ہونے کی وجہ سے یہ واقعات کتنی بار رونما ہوتے ہیں۔انہیں سرعام پھانسی دینا چاہئے۔

تاہم وزیر اعظم عمران نے کہا کہ حکومت بعد میں اس نتیجے پر پہنچی کہ جنسی زیادتی کرنے والوں کو سرعام پھانسی کی سزا کا اقدام “بین الاقوامی سطح پر قابل قبول” نہیں ہوگا کیونکہ پاکستان کو یورپی یونین کے ذریعہ جنرل سکیم آف ترجیحات (جی ایس پی) کا درجہ دیا گیا ہے جسے منسوخ کیا جاسکتا ہے۔

شئر کریں

جاویریہ حارث

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *