نواز شریف کے منہ سے فوجی قیادت کا نام سن کر دھچکا لگا، بلاول بھٹو

پی پی پی کے چیئرمین بلاول بھٹو نے کہا ہے کہ جب سابق وزیر اعظم نواز شریف نے گذشتہ ماہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ کی ایک ریلی میں اعلی عسکری قیادت کا نام لیا تو ان کو دھچکا لگا۔

 اپنی گوجرانوالہ تقریر میں مسلم لیگ (ن) کے رہنما نواز شریف کے فوجی قیادت کا نام لینے کے اقدام پر غور کرتے ہوئے بلاول بھٹو نے غیر ملکی اشاعت کو بتایا کہ فوجی قیادت کے خلاف تقریر سابق وزیر اعظم کا ذاتی فیصلہ تھا۔ 

 بلاول بھٹو نے امید ظاہر کی کہ نواز شریف جلد ہی اس بیان کی حمایت کرنے میں ثبوت پیش کردیں گے۔ ہم عوامی اجتماعات کے دوران اس طرح کے تبصرے سے گریز کرتے ہیں۔ کسی کو بھی عمران خان کو اقتدار میں لانے کے لئے ذمہ دار نہیں ٹھہرایا جاسکتا ہے۔ بلاول بھٹو نے کہا کہ موجودہ حکومت عوام کا اعتماد کھو چکی ہے جو کہ بڑھتی افراط زر اور موجودہ معاشی بحران کے ذمہ دار ہیں۔ 

یہ بھی پڑھیں | چہرے پر ہاتھ پھیرنے والوں کی پریشانی بلاوجہ نہیں ہے، مریم نواز

انہوں نے کہا کہ ملک ایک مشکل دور سے گذر رہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ترقی پسند جمہوری طاقت ہی اس کا واحد راستہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ کمزور جمہوریت بھی آمریت سے کہیں بہتر ہے۔

 پیپلز پارٹی کے چیئرمین نے کہا کہ جمہوریت کے لئے ان کی جماعت تین نسلوں سے لڑ رہی ہے۔ ہم جمہوری چینلز کے ذریعہ سویلین گورننس اور مضبوط جمہوریت پر زور دے رہے ہیں۔ 

کراچی کے واقعہ پر بلاول بھٹو نے کہا کہ سندھ کے انسپکٹر جنرل مشتاق احمد مہر کا اغواء اور ن لیگ کے رہنما ریٹائرڈ کیپٹن صفدر اعوان کی کراچی کے ایک ہوٹل سے گرفتاری دونوں معاملات زیر تفتیش ہیں۔

 انہوں نے مزید کہا کہ کراچی واقعے پر چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ سے مزید کوئی خط و کتابت نہیں ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مجھے یقین ہے کہ جلد تفتیش مکمل ہوجائے گی۔ 

شئر کریں

جاویریہ حارث

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *