نارتھ وزیرستان میں پولیو کا بارہواں کیس سامنے آ گیا

پاکستان میں پولیو وائرس کا 12 واں کیس

پاکستان میں پولیو وائرس کا 12 واں کیس جمعرات کو شمالی وزیرستان میں سامنے آیا ہے جب ایک 21 ماہ کے لڑکے میں اس مرض میں مبتلا ہونے کی تصدیق ہوئی ہے۔

 رواں سال پولیو کے تمام 12 کیسز شمالی وزیرستان سے رپورٹ ہوئے ہیں۔ 

 ضلع میر علی سے تعلق رکھنے والے اس بچے کو 18 جون کو فالج کا حملہ ہوا تھا۔ نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ، اسلام آباد میں پاکستان نیشنل پولیو لیبارٹری نے تصدیق کی ہے۔ 

 ابتدائی تحقیقات کے مطابق بچے کی دائیں ٹانگ میں فالج ہوا ہے۔ 

خیبرپختونخوا کے جنوبی اضلاع یعنی شمالی اور جنوبی وزیرستان، ڈی آئی خان، بنوں، ٹانک اور لکی مروت میں پولیو وائرس کی منتقلی کا سب سے زیادہ خطرہ ہے۔ 

بنوں نے اس سال اپریل اور مئی کے درمیان دو مثبت ماحولیاتی نمونے بھی رپورٹ کیے، جو اس بات کی تصدیق کرتے ہیں کہ جاری جنگلی پولیو وائرس کی منتقلی صرف شمالی وزیرستان تک محدود نہیں ہے۔ 

یہ بھی پڑھیں | لاہور بورڈ نے انٹر امتحانات کے لئے نیا شیڈیول جاری کر دیا

یہ بھی پڑھیں | پاک فوج نے ننگا پربت سے کوہ پیما شہروز اور فضل کو ریسکیو کر لیا

وفاقی وزیر صحت عبدالقادر پٹیل نے کہا کہ پاکستان پولیو پروگرام نے جنوبی خیبرپختونخوا میں حفاظتی ٹیکوں کی مہمیں دہرائی ہیں جب سے پہلا بچہ پولیو کی وجہ سے فالج کا شکار ہوا تھا اور اس بات کو یقینی بنانے کے ل

یے کوششیں جاری رکھے ہوئے ہے کہ وائرس نہ پھیلے۔ 

 وفاقی سیکرٹری صحت ڈاکٹر فخر عالم عرفان نے کہا ہے کہ اگرچہ یہ کیسز ملک کے ایک ہی حصے میں ہو رہے ہیں، پاکستان کے ارد گرد والدین اور دیکھ بھال کرنے والوں کو انتہائی چوکس رہنا چاہیے اور اپنے بچوں کو پولیو ویکسین کی بار بار خوراک دینا چاہیے۔

انہوں نے بتایا کہ اس سال پاکستان اور افغانستان میں 13 کیسز رپورٹ ہوئے ہیں جبکہ دنیا میں پولیو کے صرف دو ممالک رہ گئے ہیں۔ 

 نیشنل ایمرجنسی آپریشن سنٹر کے کوآرڈینیٹر ڈاکٹر شہزاد بیگ نے کہا کہ پاکستان میں پولیو کے خاتمے میں غلط فہمیوں اور ثقافتی مزاحمت کی وجہ سے کمیونٹی کی مزاحمت ہے۔ 

جنوبی کے پی میں پولیو کے خاتمے کی مہمیں ملک کے دیگر حصوں سے الگ الگ تاریخوں پر منعقد کی جائیں گی تاکہ معیار پر کوئی سمجھوتہ نہ کیا جائے۔ مہمات کو افغانستان کے ساتھ ہم آہنگ کیا جائے گا اور تارکین وطن اور بے گھر افراد سمیت تمام کمیونٹیز کو شامل کرنے کے لیے مائیکرو پلانز کو مضبوط کیا جائے گا۔

حرمین رضا

حرمین رضا اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔