مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

طالبان نے افغان حکومت کے ڈائریکٹر میڈیا سینٹر کو قتل کر دیا

افغانستان کے میڈیا اور انفارمیشن سینٹر کے ڈائریکٹر کو طالبان عسکریت پسندوں نے دارالحکومت کابل میں تباہ کر دیا ہے۔

 اطلاعات کے مطابق دعوٰ خان مین پال کو دارالحکومت کے دارالامان روڈ پر مسلح افراد نے قتل کر دیا ہے۔ طالبان کا کہنا تھا کہ انہیں ان کے کرتوتوں کی سزا دی گئی ہے۔

 یہ اطلاع اس وقت سامنے آئی ہے جب مقامی حکام نے بتایا کہ جنوبی شہر زرنج طالبان کے قبضے میں آنے والا پہلا صوبائی دارالحکومت بن گیا ہے۔ 

یہ بھی پڑھیں | بیوی کے مقابلے میں حسین کی حالت زیادہ ہونی چاہیے ، صداف کنول کے بیان پر مختلف تبصرے

ایک حکومتی ذریعے نے نجی نیوز کو بتایا کہ طالبان نے جمعہ کے روز ایران کی سرحد پر واقع صوبہ نیمروز کے شہر پر قبضہ کر لیا ہے۔

 ذرائع نے بتایا کہ قومی ڈائریکٹوریٹ آف سکیورٹی کے دفتر کے ارد گرد لڑائی جاری ہے۔ اطلاعات کی سرکاری طور پر تصدیق نہیں کی گئی ہے۔ 

مینپال کا قتل طالبان کے کابل میں وزیر دفاع کے گھر پر حملے کے چند دن بعد ہوا ہے۔ طالبان کی جانب سے  حکومتی شخصیات پر مزید حملوں کا انتباہ جاری کیا گیا ہے۔ وزارت داخلہ کے ترجمان میرویس ستانکزئی نے کہا ہے کہ بدقسمتی سے وحشی دہشت گردوں نے ایک بار پھر بزدلانہ کارروائی کی اور ایک محب وطن افغان کو شہید کردیا۔ 

افغانستان میں امریکی سفیر ڈی راس ولسن نے ٹویٹ کیا کہ وہ اس قتل سے غمزدہ ہیں۔ 

انہوں نے مزید کہا کہ یہ قتل افغانوں کے انسانی حقوق اور اظہار رائے کی آزادی کے خلاف ہیں۔  اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل نے بدھ کو بگڑتی ہوئی افغانستان کی صورتحال پر جمعہ کے روز ایک کھلا اجلاس طلب کیا ہے۔

 طالبان عسکریت پسندوں نے دیہی علاقوں پر قبضہ کر لیا ہے اور اب وہ جنوب میں قندھار ، اقتصادی لحاظ سے اہم ہرات اور صوبہ ہلمند کے دارالحکومت لشکر گار سمیت اہم شہروں پر حملے کر رہے ہیں۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔