سیالکوٹ واقعہ: مرکزی ملزم فرحان ادریس کو گرفتار کر لیا گیا

 سیالکوٹ سیالکوٹ

 سیالکوٹ واقعہ

میں پولیس نے تشدد اور اکسانے میں ملوث مرکزی ملزم فرحان ادریس کو گرفتار کر لیا ہے۔

اس سلسلے میں 100 سے زائد افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔ آئی جی پنجاب پورے معاملے کی نگرانی کر رہے ہیں۔

 وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ سری لنکا کو توقع ہے کہ پاکستان سیالکوٹ میں ایک سری لنکن کی لاش کو تشدد اور جلانے کے مبینہ واقعے کی تحقیقات اور انصاف کو یقینی بنانے کے لیے مطلوبہ کارروائی کرے گا۔ 

یہ بھی پڑھیں | پچاس سال کے بعد بہترین کھانے عادت کون سی ہے؟ جانئے طبی حکماء سے   

پاکستانی میڈیا نے رپورٹ کیا کہ سیالکوٹ میں ایک ہجوم نے سری لنکا کے ایک شخص کو اس کی لاش جلانے سے پہلے تشدد کر کے ہلاک کر دیا.

 واقعہ سیالکوٹ کے وزیرآباد روڈ پر پیش آیا جہاں مبینہ طور پر نجی فیکٹریوں کے مزدوروں نے ایک فیکٹری کے ایکسپورٹ مینیجر پر حملہ کر کے اسے قتل کرنے کے بعد لاش جلا دی۔

دریں اثناء وزیر اعظم پاکستان کا کہنا ہے کہ سیالکوٹ میں فیکٹری پر ہولناک حملہ اور سری لنکن منیجر کو زندہ جلانا پاکستان کے لیے شرم کا دن ہے۔ میں تحقیقات کی نگرانی خود کر رہا ہوں اور کوئی غلطی نہیں ہونے دی جائے گی تمام ذمہ داروں کو قانون کی پوری سختی کے ساتھ سزا دی جائے گی۔ گرفتاریاں جاری ہیں۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں