مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

سردیوں میں بجلی کا بل فی یونٹ 12.66 مقرر

مقامی گیس کی پیداوار میں کمی ، ایل این جی کی مہنگی درآمد اور گیس کے بحران سے نمٹنے کے لئے اور سردیوں میں گیس کے استعمال کی حوصلہ شکنی کے لیے ، حکومت نے بجلی کے صارفین کے لیے اضافی کھپت پر چار ماہ کے ترغیبی پیکج کی منظوری دی ہے جس میں گھریلو ، تجارتی اور عمومی خدمات حرارتی مقاصد کے لیے بجلی کے زیادہ سے زیادہ استعمال کی حوصلہ افزائی ہو گی۔

 ترغیبی پیکج کے تحت ، حکومت صارفین کے بجلی کے بڑھتے ہوئے استعمال پر صرف 12.66 روپے فی یونٹ وصول کرے گی۔

 بجلی کے صارفین یکم نومبر 2021 سے 28 فروری 2022 تک کے پیکج سے بھی لطف اندوز ہوں گے۔ 

یہ بھی پڑھیں | وکٹم ، ٹک ٹکر ، ایف آئی آر میں غلط گھر کا ایڈریس لکھیں

تمام گھریلو صارفین جن کے پاس ٹو ٹو (ٹائم آف یوز) اور ٹو یو میٹر ہیں وہ مراعات سے لطف اندوز ہوں گے۔ اس سے قبل پاور ڈویژن نے تمام ڈسکوز کو ترغیبی پیکج کے لیے ایک سمری پیش کی تھی لیکن اس میں کے الیکٹرک کے صارفین شامل نہیں تھے۔ 

کابینہ کمیٹی برائے توانائی (سی سی او ای) نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی کہ وہ کے ای صارفین کو ترغیبی پیکج میں شامل کریں۔ کے ای صارفین کو شامل کرنے کے بعد جمعہ کو ، سی سی او ای نے نئے پیکیج کی منظوری دی۔

 پیٹرولیم ڈویژن نے سردیوں کے موسم میں گیس کے استعمال کی حوصلہ شکنی کے لیے تیسرے سلیب صارفین (جو ایک مہینے میں 200 کیوبک میٹر گیس استعمال کرتے ہیں) کے لیے گیس کے نرخ میں 553 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو سے 683 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو تک بڑے پیمانے پر اضافے کی تجویز دی تھی اور اس طرح ان کا ماہانہ بل 3،733 روپے سے بڑھ کر 4،295 روپے ہو جائے گا۔ 

پی ڈی نے اپنی سمری میں ایک ماہ میں 300 مکعب میٹر گیس استعمال کرنے والے چوتھے سلیب کے صارفین کے لیے 738 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو سے 1000 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو تک ٹیرف میں اضافے کی تجویز دی تھی۔ وہ اب 10،272 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو وصول کریں گے جو موجودہ بل 8،018 روپے کے مقابلے میں ہے۔ 

اس نے پانچویں سلیب کے صارفین کے لیے گیس ٹیرف میں اضافے کی تجویز دی جو 400 مکعب میٹر گیس کا استعمال کرتے ہوئے 1500 روپے فی یونٹ کے حساب سے 1،107 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو ہے جس کی وجہ سے وہ 14،400 روپے کے مقابلے میں 19،495 روپے ماہانہ گیس بل وصول کریں گے۔ 

اس نے چھٹے سلیب صارفین کے لیے ٹیرف میں اضافے کی تجویز بھی دی ہے جو 400 مکعب میٹر سے زائد گیس استعمال کرتے ہیں اب وہ 25،494 روپے کے مقابلے میں 34،622 روپے ماہانہ بل وصول کریں گے۔ 

پہلے دو سلیب میں ٹیرف میں کوئی اضافہ نہیں ہوگا۔ 

سی سی او ای نے سمری پر غور کیا  لیکن وزیر اعظم گیس ٹیرف میں مجوزہ اضافے کا حتمی فیصلہ کریں گے۔ بجلی کے صارفین کے لیے ، گھریلو شعبے میں ، ترغیبات کی سہولت ٹو یو (صارفین کے استعمال کا میٹر) رکھنے والے صارفین کو بھی فراہم کی جائے گی۔ گھنٹے کا ٹیرف وہ 16.33 روپے فی یونٹ نان پِک آورز ٹیرف کے طور پر اور 22.65 روپے فی یونٹ بطور پیک اوور ٹیرف ادا کرتے ہیں۔  پیک ٹائم شام 5 بجے سے شروع ہوتا ہے اور رات 11 بجے ختم ہوتا ہے اور باقی وقت غیر پیک ٹائم سمجھا جاتا ہے

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔