سانحہ مری انتظامیہ کی ناہلی کی وجہ سے ہوا، رپورٹ

نجی نیوز نے رپورٹ کیا ہے کہ سانحہ مری کی انکوائری کے لیے حکومت کی جانب سے تشکیل دی گئی پانچ رکنی تحقیقاتی کمیٹی نے اتوار کو اپنی تحقیقات مکمل کر لی ہیں اور انکشاف کیا ہے کہ سانحہ مری؛ مری انتظامیہ کی غفلت اور نااہلی کی وجہ سے ہوا ہے۔

 ذرائع کے مطابق تحقیقاتی کمیٹی اپنی تحقیقات مکمل کرنے کے بعد جو متاثرین اور انتظامی حکام کے انٹرویوز پر مبنی تھی، مری سے لاہور روانہ ہوگئی ہے۔ 

 پنجاب حکومت کے ایک سینئر افسر نے بتایا کہ رپورٹ ان بیانات اور شواہد کے باوجود لکھی جا رہی ہے جو انکوائری ٹیم نے ریکارڈ کیے ہیں۔ رپورٹ ہفتے کے دوران وزیراعلیٰ پنجاب کو پیش کیے جانے کا امکان ہے۔ 

 تحقیقاتی کمیٹی نے مری کے مختلف انتظامی محکموں کے متاثرین اور 30 ​​سے ​​زائد افسران کے بیانات قلمبند کرنے کے بعد اپنی رپورٹ تیار کی ہے۔ تحقیقات میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ واقعے کے روز ایک ہی جگہ پر کئی برفانی تودے کھڑے تھے جس کی وجہ سے سڑکیں بلاک ہوگئیں، انتظامی عملہ ڈیوٹی سے غیر حاضر رہا جبکہ محکمہ موسمیات کی جانب سے برفانی طوفان کی وارننگ کو بھی نظر انداز کیا گیا۔ 

 باخبر ذرائع کے مطابق، کمیٹی نے مری پر تمام غیر قانونی ہوٹلوں، پلازوں اور تعمیراتی مقامات کو سیل کرنے کی سفارش کی ہے۔

  ذرائع نے بتایا کہ کمیٹی نے ان تمام ہوٹلوں، شاپنگ مالز اور اپارٹمنٹس کو سیل کرنے کی بھی سفارش کی ہے جہاں پارکنگ کی جگہ فراہم نہیں کی گئی ہے۔ 

 مری ایکسپریس وے پر غیر قانونی تعمیرات اور تجاوزات اور ہائی ویز کو ٹریفک کی روانی میں “بڑی رکاوٹ” قرار دیتے ہوئے کمیٹی نے مری میں “گرینڈ آپریشن” کرنے کی تجویز دی ہے۔ 

یہ بھی پڑھیں | چین نے امریکہ کو پیچھے چھوڑ دیا؛ امیر ترین ملک بن گیا   

یاد رہے کہ 8 جنوری کو کاربن مونو آکسائیڈ زہر کے باعث 23 افراد اپنی گاڑیوں میں جان سے ہاتھ دھو بیٹھے تھے کیونکہ مری میں شدید برف باری کے باعث ہزاروں سیاح گاڑیاں پھنس کر رہ گئی تھیں۔ 

یاد رہے کہ اس افسوسناک واقعے کے بعد پنجاب حکومت نے مری کو آفت زدہ علاقہ قرار دیا تھا۔ مری کی مقامی انتظامیہ کے مطابق مری کے گردونواح میں بارش اور برفانی طوفان کی پیشگوئی کی گئی کہ 50 سے 90 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے گرج چمک کے ساتھ شدید برفباری بھی ہو گی۔

 مزید برآں، اسلام آباد ہائی کورٹ (آئی ایچ سی) نے جمعرات کو نیشنل ڈیزاسٹر مینجمنٹ اتھارٹی (این ڈی ایم اے) کی سرزنش کرتے ہوئے کہا کہ وہ سانحہ مری کی ذمہ دار ہے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔