دوستی پر آمادہ نا ہونے پر انڈین شخص نے خاتون کو قتل کر دیا

پچیس سالہ نوجوان نے خودکشی کر لی

پولیس نے منگل کو بتایا کہ غازی آباد  کالونی میں ایک 25 سالہ شخص نے خودکشی کر لی جبکہ اس نے مبینہ طور پر دوستی اور شادی پر آمادہ نا ہونے پر ایک خاتون کو ہتھوڑے سے حملہ کر کے قتل کر دیا ہے۔

 عورت اور اس کے خاندان کی طرف سے اس کی تجویز کو مسترد کرنے اور دن کی روشنی میں اس پر حملہ کرنے کے بعد وہ شخص “ناراض” تھا۔ بعد میں اسے اپنے کمرے میں لٹکا ہوا پایا گیا۔ 

 ڈپٹی کمشنر آف پولیس (نارتھ ایسٹ ڈسٹرکٹ) سنجے کمار سین نے بتایا کہ 24 اگست کو میٹ نگر میں خاتون پر ایک شخص نے حملہ کر کے قتل کر دیا ہے۔ انہیں اس واقعے کے بارے میں اس وقت معلوم ہوا جب انہیں جی ٹی بی ہسپتال سے فون آیا کہ ایک 22 سالہ زخمی خاتون کو اس کے والد نے داخل کرایا ہے۔ متاثرہ اور ملزمان کالونی کے رہائشی ہیں۔ تاہم خاتون زخموں کی تاب نا لا سکی اور انتقال کر گئی۔

یہ بھی پڑھیں | سالفورڈ، برطانیہ میں کونسلر بننے والی پہلی پاکستانی خاتون 

یہ بھی پڑھیں | میکسیکو: مسلمانوں کے قتل میں ملوث افغانی گرفتار

بیٹی کو دھمکیاں دی

متاثرہ کے والد نے پولیس کو اپنی شکایت میں بتایا کہ اس نے اس کی بیٹی کی شادی طے کی تھی۔ لیکن اس کا ایک پڑوسی اس سے شادی کرنا چاہتا تھا اور اس کی منگنی کے بعد ناراض تھا۔ انہوں نے یہ بھی الزام لگایا کہ ملزم نے پہلے بھی ان کی بیٹی کو دھمکیاں دی تھیں۔ 

پیر کی صبح وہ دفتر جا رہی تھی کہ ملزم نے مبینہ طور پر اس کے سر پر ہتھوڑے سے وار کر کے اسے قتل کر دیا۔

یاد رہے کہ بھارت میں اسی نوعیت کے پہلے بی سینکڑوں واقعات ہو چکے ہیں۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔