حکومتی وفد کی الیکشن کمیشن سے ملاقات، پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس کا فیصلہ سنانے کا مطالبہ

 مسلم لیگ ن کے رہنما شاہد خاقان عباسی نے بتایا ہے کہ پاکستان ڈیموکریٹک الائنس (پی ڈی ایم) اور پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی) کے رہنماؤں پر مشتمل حکومتی وفد نے ای سی پی کے سربراہ اور چاروں صوبائی الیکشن کمشنرز سے ملاقات کی ہے اور پی ٹی آئی فارن فنڈنگ ​​کیس کا فیصلہ سنانے کا مطالبہ کیا ہے۔ 

 میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا کہ ایک حکومتی وفد نے الیکشن کمیشن آف پاکستان (ای سی پی) کے سربراہ اور ای سی پی کے صوبائی ارکان سے ملاقات کرکے پی ٹی آئی فارن فنڈنگ ​​کیس کا فیصلہ سنانے کا مطالبہ کیا۔

ملکی ذرائع سے ملنے والی فنڈنگ ​​کا اعلان

 انہوں نے مزید کہا کہ یہ کیس آٹھ سال سے لٹکا ہوا ہے، جلد از جلد اس کا فیصلہ سنایا جائے۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہر سیاسی جماعت کو کسی بھی غیر ملکی ذرائع سے ملنے والی فنڈنگ ​​کا اعلان کرنا ہوگا۔ 

 مسلم لیگ ن کے رہنما نے مزید کہا کہ پی ٹی آئی کی حکومت نے جب وہ اقتدار میں تھے تو اس کیس کو پٹڑی سے اتارنے کی پوری کوشش کی۔ لیکن، حقائق کو ان کی خواہش کے مطابق نہیں توڑا جا سکتا۔

یہ بھی پڑھیں | پرویز الہی پنجاب کابینہ کی تشکیل کے لئے آج عمران خان سے ملاقات کریں گے

یہ بھی پڑھیں | رانا ثناء اللہ نے پنجاب میں گورنر راج لگانے کی دھمکی دے دی

 ای سی پی کے پاس غیر ملکی فنڈنگ ​​کا ریکارڈ پی ٹی آئی نے فراہم نہیں کیا۔ 

شاہد خاقان عباسی نے الزام لگایا کہ پی ٹی آئی سربراہ کی دو غیر ملکی کمپنیاں ہیں جو بطور ایجنٹ امریکہ میں رجسٹرڈ ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ غیر ملکی ذرائع سے پیسہ لینے والی جماعتیں ان کے مفاد میں کام کریں گی، پاکستان کے نہیں۔ 

 عمران خان نے آٹھ سال تک غیر ملکی ذرائع سے پیسہ لیا اور اسے پاکستان میں سیاست کرنے کے لیے استعمال کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ اگر وہ صاف ہوتے تو ریکارڈ پہلے پیش کر دیتے۔

حرمین رضا

حرمین رضا اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔