جانئے آپ پاکستان میں اپنا سٹارٹ اپ کیسے شروع کر سکتے ہیں

ایک کاروباری ہونا کتنا اچھا لگتا ہے خاص طور پر جب آپ ٹیک پرینور ہوں۔ آپ ایک مسئلہ کی نشاندہی کریں۔ اس مسئلے کا حل تلاش کریں۔ اس حل کے لیے ٹیکنالوجی کا استعمال کریں۔ اسے لانچ کریں۔ اتار چڑھاؤ سے گزریں۔ اور لو جی، آپ نے ایک نئی چیز دریافت کر لی اور آپ اس کے بانی ہیں۔

 اگرچہ یہ کام بظاہر آسان لگتا ہے لیکن کچھ سوالات ہیں جن پر پاکستان کے ہر فرد کو پاکستان میں اپنے اسٹارٹ اپ شروع کرنے سے پہلے غور کرنا چاہیے۔ 

 آئیڈیا کیسا ہونا چاہیے؟

 اگر آپ ایک سٹارٹ اپ بنانے کے بارے میں سوچ رہے ہیں تو آپ کے پاس ایک آئیڈیا ہوگا۔ اس آئیڈیا کو یا تو موجودہ مسئلہ کو حل کرنا ہے یا مکمل گیم چینجر بننا ہے۔ اسے پاکستان کے موجودہ ماحول اور مارکیٹ میں خود کو قائم کرنے کے لیے بھی تیار کیا جانا چاہیے۔ 

 مثال کے طور پر کریم کو ہی لے لیں، جب اسے پاکستان میں پہلی بار لانچ کیا گیا تو اس نے لوگوں کے سفر کا طریقہ بدل دیا – پہلے شہروں کے اندر، اور اب شہروں کے درمیان بھی کریم چل رہی ہے۔ اس نے روزگار کے مواقع پیدا کرکے ملک میں معاشی چیلنج کا بھی مقابلہ کیا اور اسے اس طرح تیار کیا گیا کہ ہر صوبے کا اپنا کریم پرومو کوڈ ہو۔

 آپ کے پاس کچھ بہترین آئیڈیاز ہو سکتے ہیں، لیکن اگر آپ کسی موجودہ مسئلے کو حل کرنے اور اس آئیڈیا کی منصوبہ بندی، ترقی اور اس پر عمل درآمد کرنے کے لیے ایک کاروباری منصوبہ بنانے سے قاصر ہیں، تو اس بات کے امکانات ہیں کہ آپ کا سٹارٹ اپ طویل مدت میں کامیاب نہیں ہوگا۔ 

 ہم اس کی مالی اعانت کیسے کرتے ہیں؟ 

 آپ کے آئیڈیا کی مالی اعانت ضروری ہے۔ اور اس طرح، پیسوں کا انتظام بہت ضروری ہے۔ لہذا رسک کا اندازہ لگائیں۔ اپنے تمام انڈے ایک ٹوکری میں نا ڈالیں بہرحال کسی بھی طرح، آپ کو کہیں سے شروع کرنا ہوگا.

یہ بھی پڑھیں | لندن: سیلیکٹڈ حکومت کے خاتمے کے بعد نقصان کا ازالہ کرنا ہے، بلاول بھٹو 

 پرائم منسٹر یوتھ بزنس لون سکیم حکومت پاکستان کی طرف سے چھوٹے کاروباروں کے لیے ایک اقدام ہے جو خاص طور پر بے روزگار تعلیم یافتہ نوجوانوں کے لیے کاروباری اداروں کے قیام یا توسیع کے لیے ہے۔ اس اقدام کا مقصد پاکستان میں بیروزگاری اور غربت کو کم کرتے ہوئے انٹرپرینیورشپ کو فروغ دینا ہے۔ تمام شعبوں کا درخواست دینے کے لئے خیرمقدم کیا جاتا ہے جن میں چھوٹے تھوک فروشوں، خوردہ فروشوں، تاجروں، ایس ایم ای سیگمنٹ کے مینوفیکچررز شامل ہیں لیکن ان تک محدود نہیں جن میں بنیادی طور پر نوجوان کاروباری افراد پر توجہ دی جاتی ہے۔ 

مارکیٹنگ کے بارے میں کیا خیال ہے؟ 

اگر آپ مارکیٹنگ کے ماہر نہیں ہیں تو آپ کو اپنا اسٹارٹ اپ شروع کرنے سے پہلے مارکیٹنگ سیکھنی چاہیے۔ خوش قسمتی سے، آپ ویب سائٹس جیسے اڈیمی، لنکڈن اور کورسیرا سے یہ سب سیکھ سکتے ہیں۔ مزید برآں، سوشل میڈیا کے دور میں، بہت سے اسٹارٹ اپس اپنے کم لاگت کے مارجن کی وجہ سے اپنے بنیادی مارکیٹنگ ٹول کے طور پر ڈیجیٹل مارکیٹنگ پر بہت زیادہ انحصار کرتے ہیں۔ 

منٹور (رہنما) کون ہو گا؟

آپ کتنے ہی ہوشیار چالاک اور ذہین کیوں نا ہوں، آپ کو اپنے منٹور کا انتخاب لازمی کرنا ہو گا۔ اس کے بغیر آپ کامیاب نہیں ہو سکتے ہیں۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں