برطانیہ میں پہنچ کر دو پاکستانی کھلاڑی “غائب” ہو گئے

 قومی فیڈریشن نے بدھ کو کہا ہے کہ دو پاکستانی باکسر کامن ویلتھ گیمز کے اختتام کے بعد برمنگھم میں “غائب” ہو گئے ہیں۔ 

باکسر سلیمان بلوچ اور نذیر اللہ ٹیم کی اسلام آباد روانگی سے چند گھنٹے قبل لاپتہ

 پاکستان باکسنگ فیڈریشن (پی بی ایف) کے سیکریٹری ناصر تانگ نے اس خبر کی تصدیق کی ہے کہ باکسر سلیمان بلوچ اور نذیر اللہ ٹیم کی اسلام آباد روانگی سے چند گھنٹے قبل لاپتہ ہوگئے تھے۔

ناذر تانگ نے بتایا کہ برمنگھم سی ڈبلیو جی پیر کو ختم ہوا۔ سفری دستاویزات بشمول ان کے پاسپورٹ ابھی بھی فیڈریشن حکام کے پاس ہیں جو باکسنگ ٹیم کے ساتھ گیمز میں گئے تھے۔

 انہوں نے کہا کہ ٹیم انتظامیہ نے برطانیہ میں پاکستانی ہائی کمیشن اور لندن میں متعلقہ حکام کو سلیمان اور نذیر اللہ کی گمشدگی سے آگاہ کر دیا ہے۔

یہ بھی پڑھیں | پاکستانی ارشد ندیم نے گولڈ میڈل جیت لیا 

یہ بھی پڑھیں | پاکستانی ارشد ندیم نے گولڈ میڈل جیت لیا  

ناصر تانگ نے کہا کہ لاپتہ باکسرز کی دستاویزات پاکستان سے سفر کرنے والے تمام کھلاڑیوں کے معیاری آپریٹنگ طریقہ کار کے مطابق رکھی گئی ہیں۔ 

 پاکستان اولمپک ایسوسی ایشن (پی او اے) نے لاپتہ باکسرز کے معاملے کی تحقیقات کے لیے چار رکنی کمیٹی تشکیل دے دی ہے۔

 پاکستان کامن ویلتھ گیمز کے باکسنگ مقابلے میں کوئی بھی تمغہ جیتنے میں ناکام رہا جہاں اس نے ویٹ لفٹنگ اور جیولین تھرو میں جیتے دو گولڈ سمیت آٹھ تمغے جیتے۔ 

 باکسرز کے لاپتہ ہونے کا واقعہ قومی تیراک فیضان اکبر بھی ہنگری میں ہونے والی فینا ورلڈ چیمپئن شپ میں شرکت کے دوران لاپتہ ہونے کے دو ماہ بعد سامنے آیا ہے۔ تاہم، فیضان اکبر نے چیمپئن شپ میں حصہ لینے کی زحمت تک نہیں کی اور بوڈاپیسٹ پہنچنے کے چند گھنٹوں بعد ہی اپنے پاسپورٹ اور دیگر دستاویزات کے ساتھ لاپتہ ہو گئے۔ جون سے اس کا سراغ نہیں لگایا جا سکا۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔