اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ نے پنجاب کے 37 سیاستدانوں کے خلاف انکوائری کا حکم دے دیا

نجی نیوز کے مطابق پنجاب کے اینتی کرپشن اسٹیبلشمنٹ (اے سی ای) نے پنجاب کے 37 سیاست دانوں کے خلاف تحقیقات کی منظوری دے دی ہے۔ 

اے سی ای کے ذرائع کے مطابق کچھ ایم پی اے اور ایم این اے مختلف منصوبوں میں جعلی سرگرمیوں کے ذریعے قومی خزانے کو نقصان پہنچانے میں مصروف ہیں۔

 ذرائع کا مزید کہنا ہے کہ اے سی ای اجلاس میں موجود ایم پی اے اور ایم این اے کی بھی تفتیش کرے گا  کیونکہ ان میں سے کچھ پر سرکاری اراضی پر قبضہ کرنے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ 

اینتی کرپشن اسٹیبلشمنٹ ، پنجاب نے مسلم لیگ (ن) کے متعدد رہنماؤں کی سرگرمیوں کی تحقیقات کی بھی منظوری دی ہے جن میں رانا ثناء اللہ ، رانا مشہود احمد خان ، خواجہ آصف ، رانا مبشر ، عابد شیر علی ، ملک محمد افضل ہنجرا ، ملک محمد اجمل ہنجرا ، میاں ریاض ، عباد اللہ خان ، رانا محمد عظیم ، اشرف عباس ڈوگر ، ریاض گورایہ ، میاں ذوالفقار ، شیخ روحیل اصغر ، سہیل شوکت بٹ ، غزالی سلیم بٹ وغیرہ شامل ہیں۔ 

یہ بھی پڑھیں | پیٹرول کی قیمتوں میں بڑی کمی کر دی گئی

تفصیلات کے مطابق کئی سالوں سے یہ ایم این اے اور پی ایم اے مبینہ طور پر اربوں روپے مالیت کی سرکاری اراضی پر قابض ہیں۔ ذرائع کے مطابق ، اے سی ای پنجاب کے ڈائریکٹر جنرل گوہر نفیس نے ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہا کہ محکمہ میٹنگ والے ایم پی اے اور ایم این اے کی بھی تفتیش کرے گا کیونکہ ان میں سے کچھ سرکاری زمینوں پر قبضہ کر رہے ہیں۔ 

اس متعلق نجی نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے اے سی ای کے ڈی جی گوہر نفیس نے کہا کہ ٹھوس شواہد کی روشنی میں مقدمات درج کیے جارہے ہیں اور ملوث افراد کو گرفتار کیا جارہا ہے۔

 سابق ایم پی اے سردار میر بادشاہ قیصرانی ، سابق ایم پی اے اعجاز اچلانہ ، جاوید لطیف کی والدہ ولایت بی بی کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئیں۔

 مزید برآں ، احسن اقبال کے مبینہ فرنٹ مین اشرف عباس اور ریاض گورایہ کے خلاف ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔

 ڈی جی اے سی ای نے بتایا کہ سرکاری اراضی پر بنائے گئے گلستان سنیما کو سیل کردیا گیا ہے۔ خان پلازہ کو بھی سیل کردیا گیا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ افضل کھوکھر کی ملکیت والے کھوکھر پلازہ کو سیل کردیا گیا ہے۔ 

ڈی جی اینٹی کرپشن پنجاب گوہر نفیس نے بتایا کہ مزید شواہد کی روشنی میں مزید مقدمات درج کیے جائیں گے اور ملوث افراد کو گرفتار کیا جائے گا۔

یاد رہے کہ اے سی ای پنجاب نے احسن رضا خان کو بھی گرفتار کیا گیا ہے جو بدعنوانی کے دو مقدمات میں مطلوب تھا۔ مسلم لیگ (ن) کے رہنما پر الزام تھا کہ انہوں نے کنگن پور میں ایک سرکاری اسپتال کی اراضی پر مارکیٹ تیار کی تھی اور ایک ہاؤسنگ سوسائٹی بھی تعمیر کر رکھی تھی۔

 اس سے قبل 10 نومبر کو پنجاب میں اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ (اے سی ای) کے عہدیداروں نے مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور سابق میئر سرگودھا اسلم نوید کو اقتدار کے غلط استعمال کے الزام میں گرفتار کیا تھا۔ ایک روز قبل ہی ملتان میں اینٹی کرپشن ونگ نے مسلم لیگ ن کے سابق رہنما اور ایم پی اے ملک عبدالغفار ڈوگر کو ان کے گھر سے گرفتار کیا ہے۔

شئر کریں

جاویریہ حارث

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *