انڈین صحافی محمد زبیر کی گرفتاری کے پیچھے وجہ فیک ٹویٹر اکاؤنٹس نکلے

ہندو یووا واہنی کے ریاستی صدر اور گجرات میں بھارتیہ جنتا یووا مورچہ کے شریک کنوینر وکاش آہیر سے منسلک کم از کم 757 گمنام گیک ٹویٹر اکاؤنٹس، بھارتی صحافی محمد زبیر کی گرفتاری کے پیچھے اہم وجہ تھے۔ 

اسلامی دنیا میں بڑے پیمانے پر احتجاج

محمد زبیر نے حال ہی میں مودی کی حکمران جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے ترجمان کی طرف سے پیغمبر اسلام صلی اللہ علیہ وسلم کے بارے میں اشتعال انگیز تبصروں کی طرف توجہ مبذول کرانے میں کردار ادا کیا تھا جس نے اسلامی دنیا میں بڑے پیمانے پر احتجاج کو جنم دیا تھا۔ 

 ہندوستانی اشاعت دی وائر نے ہفتے کے روز جاری کردہ ایک خصوصی رپورٹ میں کہا ہے کہ تحقیقات سے وکاش سے منسلک سینکڑوں اکاؤنٹس کے نیٹ ورک کا پردہ فاش ہوا، جن میں سے تمام نے صحافیوں کی رائے کو غلط معنی میں رکھ کر زبیر اور آلٹ نیوز کے شریک بانی پارتک سنہا کو پھنسانے کی کوشش کی۔ 

“ہندو فوبک” کے طور پر ٹویٹس اور مقامی حکام کو ٹیگ کرنا تاکہ دونوں کو مذہبی جذبات کو ٹھیس پہنچانے کے جرم میں قید کیا جائے۔ 

صحافی محمد زبیر اور آلٹ نیوز کے شریک بانی کی گرفتاری، ہندو یووا واہنی کے ریاستی صدر وکاش آہیر سے منسلک گمنام اور غیر مستند اکاؤنٹس کے نیٹ ورک کے ذریعے برسوں سے جاری مہم کا خاتمہ ہے۔ گجرات میں بھارتیہ جنتا یووا مورچہ (بی جے وائی ایم) کے کنوینر، دی وائر کی تحقیقات سے ثابت ہوا ہے۔

یہ بھی پڑھیں | بھارتی سپریم کورٹ نے انڈیا میں مذہبی فسادات کا ذمہ دار نوپور شرما کو قرار دے دیا 

یہ بھی پڑھیں | بھارت: مودی حکومت کے ناقد فیکٹ چیک ویب سائٹ چلانے والا شخص گرفتار  

اس نیٹ ورک میں “بالاجکیجائن” کے آٹھ فیک اکاؤنٹس بھی شامل تھے، ایک گمنام اکاؤنٹ جس کی شکایت نے دہلی پولیس کے ذریعے زبیر کی گرفتاری کی بنیاد بنائی۔ 

 آٹھ اکاؤنٹس میں ایک جیسی خصوصیات تھیں: ایک ہی صارف نام، پروفائل تصویر اور ایک جیسی ٹویٹس اور ٹویٹر پر آلٹ نیوز کے شریک بانی کو نشانہ بنانے کے لیے ایک ہی طریقہ کار کو استعمال کیا۔ 

فی الحال، ان آٹھ ریپلیکا اکاؤنٹس میں سے پانچ کو حذف کر دیا گیا ہے، تاہم، دو دیگر اکاؤنٹس – بالاجیکیجین اور ہنومان بھکت 101 – فعال رہے ہیں۔

 نیٹ ورک کے قریب سے معائنے سے معلوم ہوا کہ 283 اکاؤنٹس نے بوٹ جیسے رویے سے وابستہ متعدد خصوصیات کا مظاہرہ کیا ہے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں