اقتدار میں کوئی بھی ہو، پاکستان چین سے قریبی تعلقات رکھے گا، وزیر اعظم عمران خان

 وزیر اعظم عمران خان نے جمعرات کو کہا ہے کہ چین کے ساتھ پاکستان کے تعلقات کا انحصار اس بات پر نہیں ہے کہ اسلام آباد میں کون اقتدار میں ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہمسایہ ملک کے ساتھ ہمیشہ گہری دوستی رہے گی کیونکہ دونوں ممالک کے درمیان دوطرفہ تعلقات بہترین ہیں۔

 انہوں نے جمعرات کو فوڈان یونیورسٹی کے ڈائریکٹر کو انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا کہ عمران خان اقتدار میں ہیں یا کوئی اور اقتدار میں ہیں؛ پاکستان اور چین کے درمیان ہمیشہ اچھے تعلقات رہیں گے۔

چین کے ساتھ پاکستان کے تعلقات کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ ستر سالوں سے پاکستان کے چین کے ساتھ تعلقات مستقل مزاجی سے ہیں۔ 

انہوں نے کہا کہ پاکستان ہر ممکن فورم پر چین کے ساتھ کھڑا ہے اور چین بھی ہمارے ساتھ کھڑا ہے۔

یہ بھی پڑھیں | عمران خان نے کراچی مسائل پر آنکھیں بند کر رکھی ہیں، شہباز شریف

 امریکہ کے ساتھ موازنہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ امریکہ پاکستان کا اچھا دوست رہا ہے لیکن وہ چین جیسا نہیں رہا جو ہر موسم کا دوست ہے۔ 

 انہوں نے کہا کہ ایسا وقت بھی آیا ہے جب امریکہ بہت دوستانہ رہا ہے لیکن پھر وہ سوچتے ہیں کہ پاکستان ان کے لیے کسی کام کا نہیں ہے، اور پھر ہم چھوڑ دیتے ہیں۔

 امریکا کے ساتھ پاکستان کے کشیدہ تعلقات کی مثال دیتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان افغانستان میں سوویت یونین کے خلاف فرنٹ لائن اسٹیٹ بن گیا جس نے پاکستان کو امریکا کا دوست بنا دیا۔

 انہوں نے امریکہ نے ہماری مدد بھی کی اور ہمارے ساتھ اچھے تھے لیک “جب سوویت یونین [افغانستان] سے نکلے تو انہوں نے پاکستان پر پابندیاں لگا دیں۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں