اسحاق ڈار جولائی کے چوتھے ہفتے پاکستان آئیں گے

  سابق وزیر خزانہ اور مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما اسحاق ڈار نے بدھ کو انکشاف کیا کہ انہوں نے پارٹی رہنما نواز شریف کی درخواست پر پاکستان واپس آنے کا فیصلہ کیا ہے۔ 

 لندن میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے ڈار نے کہا کہ ان کی واپسی کا فیصلہ وزیراعظم شہباز شریف کی رضامندی کے بعد کیا گیا۔

 انہوں نے مزید کہا کہ میں سابق وزیراعظم نواز شریف کے حکم پر جولائی کے چوتھے ہفتے میں پاکستان جا رہا ہوں۔

یہ بھی پڑھیں | ابھی ٹینکوں کے آگے لیٹنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے، عمران خان کا ورکرز سے خطاب

یہ بھی پڑھیں | لاہور ہائیکورٹ نے حمزہ شہباز الیکشن کیس کی سماعت دوبارہ شروع کر دی

اسحاق ڈار نے مزید انکشاف کیا کہ انہیں اپنا نیا پاسپورٹ مل گیا ہے

اسحاق ڈار نے مزید انکشاف کیا کہ انہیں اپنا نیا پاسپورٹ مل گیا ہے اور ڈاکٹر نے انہیں اجازت بھی دے دی ہے۔ انہوں نے پی ٹی آئی حکومت پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ مجھے پاکستان واپس آنے کے لیے کسی لیگی رہنما کی اجازت کی ضرورت نہیں، کیونکہ نواز شریف کے احکامات ہی کافی ہیں۔

اسحاق ڈار نے کہا کہ ان کے خلاف صرف ایک مقدمہ درج کیا گیا تھا جو جھوٹ پر مبنی تھا۔

سابق وزیر خزانہ کا کہنا تھا کہ وہ اپنی آمد پر سینیٹر کے عہدے کا حلف اٹھائیں گے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

ہمارا نیوز لیٹر جوائن کریں
تازہ ترین آرٹیکلز، نوکریوں اور تفریحی خبریں ڈائریکٹ اپنے انباکس میں حاصل کریں
یہاں ایک لاکھ ستر ہزار سبسکرائبرز ہیں