احساس راشن سبسڈی پروگرام: وزیر اعلی پنجاب کا مستحق افراد کو پندرہ سو ماہانہ دینے کا فیصلہ

وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی نے احساس راشن سبسڈی پروگرام شروع کرنے کی منظوری

وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی نے احساس راشن سبسڈی پروگرام شروع کرنے کی منظوری دیتے ہوئے غریبوں کو احساس راشن سبسڈی پروگرام کے تحت 1000 روپے دینے کی بجائے 1500 روپے ماہانہ دینے کا فیصلہ کیا ہے۔ 

 احساس راشن سبسڈی پروگرام کے تحت غریب لوگوں کو رعایتی نرخوں پر آٹا، دالیں اور گھی دیا جائے گا۔ وزیراعلیٰ نے احساس راشن سبسڈی پروگرام پر عملدرآمد کے لیے وزارتی اسٹیئرنگ کمیٹی تشکیل دینے کی ہدایت کی۔ اسٹیئرنگ کمیٹی کی سربراہ ڈاکٹر ثانیہ نشتر ہوں گی۔ 

 وزیراعلیٰ نے انکشاف کیا کہ احساس راشن سبسڈی پروگرام کے حوالے سے ایک ورکنگ گروپ بھی تشکیل دیا جائے گا، انہوں نے مزید کہا کہ احساس راشن سبسڈی پروگرام پر عملدرآمد کے حوالے سے مانیٹرنگ کا ایک موثر نظام وضع کیا جائے گا۔

 پرویز الٰہی نے احساس پروگرامز کے لیے احساس ایکٹ تیار کرنے کی ہدایت کی۔ انہوں نے بتایا کہ احساس ایکٹ اسمبلی سے منظور کیا جائے گا۔ وزیراعلیٰ نے سماجی تحفظ کے مختلف پروگراموں کو ایک پلیٹ فارم پر اکٹھا کرنے کی ہدایت کی اور سماجی تحفظ کے پروگراموں کا دوبارہ جائزہ لینے پر زور دیا اور تمام پروگراموں کو ایک ساتھ ملایا جائے۔ انہوں نے احساس پروگرام کو انسانیت کی فلاح و بہبود اور معاشرے میں سماجی تحفظ سے محروم افراد کو ریاست کی ذمہ داری قرار دیا۔ 

 وزیراعلیٰ نے احساس راشن سبسڈی پروگرام کو غربت کے خاتمے اور فلاحی ریاست کی تعمیر کی جانب ایک بڑا قدم قرار دیا۔

یہ بھی پڑھیں | سندھ: پانچ اگست کو یوم استحصال کشمیر منانے کی تیاریاں

یہ بھی پڑھیں | بلوچستان: سیلاب سے فوت شدگان کی تعداد 166 ہو گئی

 ڈاکٹر ثانیہ نشتر نے احساس راشن سبسڈی پروگرام، احساس کارڈ اور احساس تحفظ پروگرام کی نمایاں خصوصیات کے بارے میں بریفنگ دی۔ صوبائی وزیر ڈاکٹر یاسمین راشد، ڈاکٹر ثانیہ نشتر، وزیراعلیٰ کے مشیر عمر سرفراز چیمہ، ایم این اے مونس الٰہی، سابق چیئرمین پی اینڈ ڈی سلمان غنی، وزیراعلیٰ کے سابق پرنسپل سیکرٹری جی ایم سکندر، چیئرمین پلاننگ اینڈ ڈویلپمنٹ، ڈائریکٹر جنرل ریسکیو 1122 اور متعلقہ حکام نے اجلاس میں شرکت کی۔ 

 دریں اثناء سیکرٹری جنرل وفاق المدارس العربیہ پاکستان مولانا محمد حنیف جالندری نے نکاح نامہ میں ختم نبوت حلف نامے کی شق شامل کرنے پر وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی کے مثالی اقدام کو سراہا۔

مولانا محمد حنیف جالندری نے وزیراعلیٰ سے ملاقات کرتے ہوئے ان کے اس اقدام کو سراہا اور اسے دین کی عظیم خدمت قرار دیا۔ انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں آپ کا قدم قابل تعریف ہے جو ہمیشہ یاد رکھا جائے گا۔

 انہوں نے مزید کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب کی قیادت میں حکومت پنجاب نے صوبے بھر میں مذہبی رواداری اور ہم آہنگی کے فروغ کے لیے بہترین اقدامات کیے ہیں۔ 

 وزیراعلیٰ نے بتایا کہ نکاح رجسٹرار کو نئے ختم نبوت حلف نامے کے فارم فراہم کرنے کی ہدایات جاری کر دی گئی ہیں اور کہا کہ نئے فارم دینے سے انکار کرنے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔