مصنف کے بارے میں

صفحۂ اول

گیگی حدید کا فلسطین کے حق میں بڑا بیان سامنے آ گیا

اسرائیل کے فلسطین پر مسلسل مظالم کے بعد دنیا بھر کی مشہور اداکاراوں نے فلسطین کی حمایت کی ہے جن میں گیگی حدید بھی شامل ہے۔

 اسرائیل کی جانب سے فلسطینی فیملیز کو یروشلم سے زبردستی نکالے جانے کی دھمکی اور عملی اقدامات کے بعد بعد امریکی فلسطینی سپر ماڈل نے انسٹاگرام سٹوریز کی ایک سیریز میں دکھ اور افسوس کا اظہار کیا۔ 

حالیہ دنوں میں اسرائیلی عدالت میں تاخیر سے آنے والے اس فیصلے سے قبل حالیہ دنوں میں تناؤ میں تیزی سے اضافہ ہوا ہے کہ آیا حکام اس قابل ہیں کہ وہ پرانے شہر کے باہر واقع شیخ جرح کے پڑوس سے درجنوں فلسطینیوں کو بے دخل کردیں اور یہودی آباد کاروں کو مکانات دے سکیں۔ 

تفصیلات کے مطابق 26 سالہ ماڈل گیگی حدید نے باقاعدہ طور پر اپنا پلیٹ فارم فلسطین کی حمایت ظاہر کرنے کے لئے استعمال کیا ہے اور حالیہ برسوں میں اس کی بہن بیلا حدید بھی اس مقصد کے لئے تیزی سے آواز اٹھاتی نظر آ رہی ہے۔

 اپنے انسٹاگرام سٹوریز پر کئی پوسٹس شیئر کرتے ہوئے گیگی حدید نے ایک آرٹسٹ کا کام اس اقتباس کے ساتھ شیئر کیا: “آپ فلسطین کو ختم نہیں کر سکیں گے۔”

یہ بھی پڑھیں | روپیہ دو سال کی بلند ترین قیمت پر آ گیا 

گیگی حدید نے صحافیوں اور کارکن نور ٹیگوری کی بڑھتی ہوئی کشیدگی کی وضاحت کرتے ہوئے ایک پوسٹ پوسٹ کی۔ پوسٹ کے ایک حصے میں لکھا گیا ہے کہ “ہم سب کو غیر متفقہ طور پر اتفاق کرنا چاہئے کہ اچانک آپ کی فیملی کو گھر سے نکال دیا جائے تو یہ مجرمانہ اور غیر انسانی فعل ہے۔ انہوں نے وضاحت کی کہ اس بات کا مذہب سے کوئی تعلق نہیں ہے۔ اگر آپ نے سنا ہے تو بھی ، یہ اب مذہب کی بات نہیں رہی ہے۔ یہ ایک سیاسی چیز ہے۔ ایک ایسی بات جو فلسطینیوں اور اسرائیلیوں دونوں کو سمجھ آنی چاہیے۔ 

نجی نیوز کے مطابق ، فلسطینی ریڈ کریسنٹ سوسائٹی نے کہا ہے کہ پیر کو مسجد اقصی کے احاطے میں تشدد کے بعد 305 سے زیادہ فلسطینی نمازی زخمی اور کم از کم 228 کو اسپتال منتقل کیا گیا۔ 

مزید برآں،گزشتہ روز اسرائیل کے غزہ پر حملے سے اب تک تیس سے زائد فلسطینی شہید ہو چکے ہیں جبکہ سینکڑوں زخمی ہیں۔ اسرائیل کی اس کاروائی کے بعد حماس نے بھی اسرائیل پر راکٹ داغے جن سے دو اسرائیلیوں کی موت ہوئی جبکہ متعدد زخمی ہوئے۔

حرمین رضا

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔