کیا قطر کورونا وائرس کیسز کے اعداد و شمار چھپا رہا ہے؟جانئے مکمل حقائق

کورونا وائرس نے دیکھا ہے کہ دنیا کے بیشتر ممالک اس کے خلاف لڑنے اور اپنے لوگوں کو بچانے کے لئے مصروف ہیں لیکن بدقسمتی سے قطر جیسے کچھ ممالک کا معاملہ ایسا نہیں ہے جنہوں نے کورونا وائرس سے متعلق اعداد و شمار کو چھپانے اور غلط معلومات کے پھیلاؤ کا انتخاب کیا ہے۔  اس سے قبل بھی ایسی اطلاعات موصول ہوئیں ہیں جن سے یہ ظاہر ہوا ہے کہ قطر پوری طرح سے کوویڈ19بسے ہونے والی اموات کے اعداد و شمار کو چھپانے کی کوشش کر رہا ہے جس میں ایسے افراد شامل ہیں جو کورونا وائرس متاثرہ ہیں۔

 ماہرین کی جانب سے کہا گیا کہ ایسا دوحہ میں ہونے والے فیفا ورلڈ کپ کی منسوخی سے بچنے کے لئے کیا جارہا ہے۔ ماہرین کے مطابق 2022 میں ہونے والے فٹ بال ورلڈ کپ کے لئے قطر بہت دانستہ طور پر تیاری کر رہا ہے۔ دوحہ پر الزامات میں اضافہ ہونے کے بعد وہ خود پر مثبت روشنی ڈالنے کی کوشش کر رہا ہے اس پر الزام ہے کہ وہ دہشت گرد گروہوں کی حمایت کرتا رہا ہے اور وہ اخوان المسلمون جیسے انتہا پسند گروپوں کو مالی اعانت فراہم کررہا ہے۔

یہ بھی پڑھیں | کورونا کی دوسری لہر، وزیر اعظم نے سکول اور صنعتوں کی بندش متعلق بڑا اعلان کر دیا

 قطر کی حکومت کے ذریعہ پیش کردہ کیسز کی تعداد خاص طور پر صحتیابی کی شرح کے مقابلے میں قابل اعتراض ہے۔ کیسوں کی تعداد 1،33،000 سے زیادہ ہے جبکہ صحتیابی کی شرح 1،30،000 کے قریب ہے جو دنیا کے ممالک میں سب سے زیادہ ہے۔ یہ مشکوک ہے کیونکہ قطری حکومت کی جانب سے ملک میں وائرس کے پھیلاؤ کو کنٹرول کرنے کے لئے کوئی عملی منصوبہ نہیں کیا گیا ہے۔ 

اصل بات یہ ہے کہ مئی میں صرف پی آر اسٹنٹ کی وجہ سے فلائٹ اٹینڈینٹ کی جان کو خطرے میں ڈالنے کے بعد ، دوحہ نے خود کو ایک لاپرواہ ملک کی حیثیت سے ظاہر کیا ہے۔ جب ساری دنیا لاک ڈاؤن میں تھی اور ہوائی اڈوں اور فلائٹ کے عہدیدار ضروریات کو پورا کرنے کے لئے جدوجہد کر رہے تھے تو قطر نے اپنی عالمی معیار کی ایئر لائنز کی تشہیر کا انتخاب اس وقت پر کر کے پرواز کے عملے کی جان کو خطرہ میں ڈال دیا۔ یہاں تک کہ جب لوگ پرواز سے پہلے ایک ہزار بار سوچتے تھے تب قطر کی ایئر ویز جہالت پر مبنی ایک راستہ پر چلتی رہی۔ یہ واقعہ  ظاہر کرتا ہے کہ کس طرح قطر نے کورونا وائرس کو نظر انداز کیا جس سے لاکھوں افراد ہلاک ہوگئے۔

 اس طرح کا ایک اور واقعہ اس وقت بھی ہوا جب قطر نے صحت سے متعلق اہلکاروں کی جانب سے سختی کی ہدایت جاری کرنے کے باوجود مستقل طور پر تارکین وطن  کو ان کے آبائی ممالک بھیجا۔  اطلاعات آ رہی ہیں کہ وائرس کی انتہا کے باوجود بھی فیفا ورلڈ کپ اور اسٹیڈیم کو تیار کرنے کی تیاریاں جاری ہیں۔ 

جاویریہ حارث

جاویریہ حارث اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔

سبسکرائب
کو مطلع کریں
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments
0
آپ اس متعلق کیا کہتے ہیں؟ اپنی رائے کمنٹ کریںx
()
x