کوئی بیرونی سازش نہیں ہوئی، ڈی جی آئی ایس پی آر ایک دفعہ پھر میدان میں آ گئے

انٹر سروسز پبلک ریلیشنز کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل بابر افتخار نے ایک بار پھر پرانا معقف دہراتے ہوئے کہا ہے کہ قومی سلامتی کمیٹی کے دونوں اجلاسوں میں واضح الفاظ میں کہا گیا کہ سابقہ ​​حکومت کے خلاف سازش کا کوئی ثبوت نہیں ہے۔

یہ بھی پڑھیں | بھارت میں گستاخانہ بیانات: پاکستان کی اقوام متحدہ سے خاموش نا رہنے کی اپیل

یہ بھی پڑھیں | توہین رسالت: بھارت نے احتجاج کرنے والوں کے گھر مسمار کر دئیے 

منگل کو ایک نجی نیوز چینل سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اظہار رائے کی آزادی ہر ایک کا حق ہے لیکن کسی کو حقائق کو مسخ نہیں کرنا چاہیے اور جھوٹ کا سہارا نہیں

لینا چاہیے۔ 

انہوں نے کہا کہ پاکستان اور چین کے درمیان مضبوط تزویراتی اور دفاعی تعلقات ہیں اور چین پاکستان اقتصادی راہداری کی سیکیورٹی میں کوئی کمی نہیں آئی۔ 

 ڈی جی آئی ایس پی آر نے کہا کہ 2020 سے دفاعی بجٹ میں کوئی اضافہ نہیں ہوا اور پاک فوج اپنے اخراجات کم کر رہی ہے۔ 

 انہوں نے کہا کہ پاک فوج نے گزشتہ سال کورونا وبا کے دوران حکومت کو 6 ارب روپے واپس کیے تھے۔

حرمین رضا

حرمین رضا اردو خبر میں پاکستان میں مقیم مصنف اور سابق ایڈیٹر ہیں۔